Global Editions

چین کا شہریوں کےسماجی او ر مالی رویوں پر مشتمل ڈیجیٹل ریکارڈ مرتب کرنیکامنصوبہ

یہ نومبر کا ایک یخ بستہ دن ہے اور اس وقت ایک بج چکا ہے۔ چین کے ہانگ زوا ریلوے سٹیشن پر ایک خاتون تیزی سے چلتی ہوئی جا رہی ہے تاکہ وہ مطلوبہ ٹرین پکڑ سکے، وہ تیزی سے ٹکٹ گیٹ سے گزرتی ہے مگر اتنی تیزی سے نہیں گزر پائی کہ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی نظروں سے بچ سکے جنہوں نے فوری طور پر نوٹ کر لیا کہ مذکورہ خاتون نے درست طور پر اپنا کارڈ سوائپ نہیں کیا۔ اب دیر ہو گئی تھی اور خاتون کے حکومتی ریکارڈ پر ایک سیاہ دھبہ لگ چکا تھا اور اب اس کے لئے مستقبل میں سفر کرنا بہت دشوار ہو چکا تھا۔ درحقیقت یہ جارج اورویل (George Orwell) کے ناول کی ازسرنو تخیل سازی ہے یہ ناول 1984 کو شائع کیا گیا تھا۔ تاہم اس ناول میں پیش کی جانیوالی تخیلاتی تصویر اب چینی عوام کے لئے مبنی بر حقیقت معلوم ہوتی ہے۔ چین کی حکومت مستقبل میں استبدانہ بگ ڈیٹا سکیم متعارف کرانے جا رہی ہے۔ وال سٹریٹ جرنل کی ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت چینی حکومت ایک ایسے نظام کے تجربات کر رہی ہے جس میں شہریوں کے ڈیجیٹل ریکارڈ مرتب کئے جائیں گے جو شہریوں کے سماجی اور فنانشل رویوں پر مبنی ہونگے۔ اس کے ذریعے انہیں سوشل کریڈٹ سکورز مارک کئے جائیں گے اور اس کے ذریعے اس امر کا تعین کیا جائیگا کہ شہری کو سفر، تعلیم، قرضہ جات، انشورنس سکیم کی سروسز فراہم کی جا سکتی ہیں یا نہیں۔ اس پراجیکٹ کے تحت وکلاء اور صحافیوں کی خصوصی مانیٹرنگ کی جائیگی۔ چینی حکومت کی جانب سے مجوزہ نئے نظام کے تحت اعتماد کے قابل سمجھے جانیوالے شہریوں کو ہر طرح کی سہولیات حاصل ہونگی جبکہ ناقابل اعتماد افراد کے لئے ایک قدم اٹھانا بھی محال کر دیا جائیگا۔ وال سٹریٹ جرنل کے مطابق اس نظام کے تحت پہلے مرحلے میں کرایہ چھپانے یا کم کرایہ دینے والوں، فیملی پلاننگ قوانین کی خلاف ورزی کرنے والوں اور لاپرواہی برتنے والوں کو پہلے لاگ میں شامل کیا جائیگا اور پھر اس کا دائرہ بتدریج بڑھا دیا جائیگا اور اس میں انٹرنیٹ کے استعمال کو بھی شامل کیا جائیگا۔ اس مجوزہ نظام کے چند حصوں پر پہلے ہی تجربات جاری ہیں تاہم اس نظام کو عمل درآمد کو یقینی بنانا نہایت مشکل امر ہے اور اس میں کئی طرح کے چیلنج درپیش ہیں۔ مثال کے طور پر اتنے بڑے ڈیٹا کی پراسیسنگ اور اس کے درست ہونے کی پڑتال نہایت ہی مشکل امر ہے۔ چین ایک ارب چودہ کروڑ نفوس پر مشتمل ملک ہے انہیں بگ ڈیٹا کے ذریعے ہینڈل کرنا نہایت مشکل ہے۔

تحریر: جیمی کونڈیلفی (Jamie Condliffe)

Read in English

Authors

*

Top